Ask @Mahamfatima111:

Random thoughts !?

Zeeshan Malik
یوں نہ ہو دل کی سخن آرائی بھی جاتی رہے
یوں نہ ہو اک دن مِری گویائی بھی جاتی رہے
یوں نہ ہو تو میری دنیا میں پلٹ آئے کبھی
یوں نہ ہو مجھ سے مری تنہائی بھی جاتی رہے
یوں نہ ہو نکلے نہ کوئی بھی غبارِ راہ سے
یوں نہ ہو اس کھوج میں بینائی بھی جاتی رہے
یوں نہ ہو کنکر بھی اونچی کر نہ پائیں سطحِ آب
یوں نہ ہو تالاب کی گہرائی بھی جاتی رہے
یوں نہ ہو آئینہ ٹوٹے اور سزا مجھ کو ملے
یوں نہ ہو کہ مری یکتائی بھی جاتی رہے

View more

Message for ur loved ones ?

Sheraz ❤
لب سے دل کا ، دل سے لب کا رابطہ کوئی نہیں
حسرتیں ہی حسرتیں ہیں ، مدعا کوئی نہیں
اپنے من کا عکس ہے، اپنی صدا کی بازگشت
دوست ، دشمن ، آشنا ، ناآشنا کوئی نہیں
سب کے سب اپنے گریبانوں میں ہیں ڈوبے ہوئے
گل سے گل تک رشتۂ موجِ صبا کوئی نہیں
حالِ زار ایسا کہ دیکھے سے ترس آنے لگے
سنگدل اتنے کہ ہونٹوں پر دعا کوئی نہیں

View more

Next