Ask @haseeb_rafiq8:

Piece of poetry?

•تحریم
Written by me:
کیا کیا خواب دیکھے، تھے ہمارے
سب خَاک ہوۓ جل کر، آشیاں ہمارے
کر گئے ہو میرے دِل کو ریزہ ریزہ
کہتے ہو کچھ خبّر نہیں، اے ہمارے
اِتنے ستم تو غیروں نے بھی نا دئے
جتنے زَخم اُنھوں نے دِیے، تھے ہمارے
نہیں تم سے کوئ شِکایت بس اِلتجا اِتنی
نا دیکھنے آنا حال کیونکے، ہو ہمارے
نا کر کوئ گِلا وشِکوہ اُن سے اے حسیب!
جِن کے دِل میں تھا سب کچھ، سواۓ ہمارے...💔
( حسیب رفیق )
One more:
اِک شراب سی مستی تھی
تیری نِگاہوں میں بستی تھی
تیرے مُکھڑے پر زُلفوں کو کیسے کرو بیاں
رات کے اندھیرے میں ہو جیسے چُودویں کا چاند
تیری ان ہی اداؤں نے ہمیں بھری محفل میں لُوٹا
لوّٹاَ بیٹھا میں میلاِ پیار میں سب کچھ
کچھ نا مِلا گفلتوں کے سِوا ہمیں
کچھ مُل ہی نا لگایا تو نے میرے جزبات کا

اگر کر ہی لیا تھا کمبخت پیار اے حسیب!
تو شِکوہ کس چیز کا، گِلا کس بات کا...💔
( حسیب رفیق )

View more

Next