Ask @talib1407:

Thori shayari hojae ?

نکھر تو جاتا ہہ بہت
بکھر کہ پاگل دل
سنور نہی پاتا پھر
لاکھ سمجھا لو دل کو
میری سوچ میں ٹھرا تھا
ایک سوال کئ دن سے
تم چہرے پہ نا پڑھ پاے
آو لفظوں میں بتایں تمکو
کیا تجھے الم تھا میری زات کا؟
چل چھوڑ۔۔۔۔۔
اب کیا فائدا اس بات کا
آینہ بھی مجھ سے روٹھ گیا
دل سچ سے میرا ٹوٹ گیا
میں زیست سے اپنی تنگ آ کر
پھر موت کا جھولا جھول گیا

مجھے ڈھونڈ نہ اب تو نگر نگر
تجھے نہی قدر میرے بیخبر
نہ کوی نام رکھا ہہ نہ کوی شجر
ایسی ہہ جاناں میری قبر
نہ اہم تھا میں نہ لَختہ جگر
کیوں رہتی ہہ تجھکو میری فکر؟
نا پاس رکھیں نہ آس رکھیں
یہ آخری خط بس یاد رکھییں
الفاظ نھیں یہ موتی ہیں
میری آنکھوں میں
جو چمکے تھے
میری سانسوں میں
جو اٹکے تھے
تجھے مل ہیں گئے تو آہ نہ بھر
میری جان اب مجھکو یاد نہ کر ۔۔!

View more

Confess something 🥀

زمانے بھر کو اوداس کر کے
خشی کا ستیاناس کر کے
میرے رقیبوں کو خاس کر کے
بحت ہئ دوری سے پاس کر کی
تمہیں یہ لگتا تھا
جانے دینگے ؟
سبھی کو جا کے ھماری باتیں
بتاو گے
اور بتانیں دینگے؟
تم ھم سے ہٹ کر وسالِ ھجراں
مناوگے اور
منانیں دینگے ؟
میری نظم کو نیلام کر کے
کماو گے
اور کمانے دینگے؟
تو جاناں سن لو
ازیتوں کا ترانا سن لو
کے اب کوئ سا بھی حال دو تم
بھلے حی دل سے نکال دو تم
کمال دو یا زوال دو تم
یا میری گندی مسال دو تم
میں پھر بھی جاناں
میں پھر بھی جاناں.....!
پڑا ہوا ھوں پڑا رھوں گا
گڑا ہوا ہوں گڑا رھوں گا
اب ہات کاٹو یا پاوں کاٹو
میں پھر بھی جاناں کھڑا رھوں گا
بتاوں تم کو
میں کیا کروں گا ؟
میں اب زخم کو زبان دوں گا
میں اب ازیت کو شان دوں گا
میں اب سمبھالوں گا حجر والے
میں اب سبھی کو مکان دوں گا
میں اب بلاوں گا سارۓ قاسد
میں جلاوں گا سارے حاسد
میں اب تفرقے کو چیر کر پھر
میں اب مٹاوں گا سارے فاسد
میں اب نکالوں گا سارا غصہ
میں اب اجاڑوں گا تیرا حصہ
میں اب اٹھاوں گا سارے پردے
میں اب بتاوں گا تیرا قصہ
مزید سن لو
او نفرتوں کے یزید سن لو
میں اب نظم کا سحارا لوں گا
میں ہر ظلم کا کفارہ لوں گا
اگر تو جلتا ہے شاعری سے
تو یہ مزہ میں دوبارا لوں گا
میں اتنی سختی سے کھو گیا ھوں
کہ اب سبہی کا میں ھو گیا ھوں
کوئ بھی مجھ سا نہی ملا جب
خد اپنے قدموں میں سو گیا ھوں
میں اب ازیت کا پیر ھوں جی
میں عاشقوں کا فقیر ھوں جی
کبھی میں حیدر کبھی علی جوں
جو بھی ھوں اب اخیر ھوں جی..!
جون ایلیا

View more

Next