Ask @shajjiali9:

Share your favourite saying or poetry.......🔥

فاطمہ علی
ہوا بھی خوشگوار ہے
گالوں پہ بھی نکھار ہے
ترنم ہزار ہے
بہار پر بہار ہے
کہاں چلا ہے ساقیا!
ادھر تو لوٹ ،ادھر تو آ
ارے یہ دیکھتا ہے کیا
اٹھا سبو ،سبو اٹھا
سبو اٹھا، پیالہ بھر
پیالہ بھر کے دے ادھر
چمن کی سمت کر نظر
سماں تو دیکھ بےخبر
وہ کالی کالی بدلیاں
افق پہ ہو گئی عیاں
وہ اک ہجوم میکشاں
ہے سوے میکدّہ رواں
یہ کیا گماں ہے بدگماں
سمجھ نہ مجھ کو ناتواں
خیال زہد ابھی کہاں
ابھی تو میں جواں ہوں
عبادتوں کا ذکر ہے
نجات کی بھی فکر ہے
جنوں ہے صواب کا
خیال ہے عذاب کا
مگر سنو تو شیخ جی
عجیب شے ہیں آپ بھی
بھلا شباب و عاشقی
الگ ہوے بھی ہے کبھی
حسین جلوہ ریز ہوں
ادایئں فتنہ خیز ہوں
ہوایئں عطر بیز ہوں
تو شوق کیوں نہ تیز ہوں
نگار ہاے فتنہ گر
کوئی ادھر کوئی ادھر
ابھارتے ہیں عیش پر
تو کیا کرے کوئی بشر
چلو جی قصہ مختصر
تمہارا نقطۂ نظر
درست ہے تو ہو مگر
ابھی تو میں جوان ہوں
یہ گشت کوہسار کی
یہ سیر جوے بار کی
یہ بلبلوں کے چہچہے
یہ گلرخوں کے قہقہے
کسی سے میل ہو گیا
تو رنج و فکر کھو گیا
کبھی جو بخت سو گیا
یہ ہنس گیا وہ رو گیا
یہ عشق کی کہانیاں
یہ رس بھری جوانیاں
ادھر سے مہربانیاں
ادھر سے لن ترانیاں
یہ آسمان یہ زمیں
نظارہ ہاے دلنشیں
انہیں حیات آفرین
بھلا میں چھوڑ دوں یہیں!
ہے موت اس قدر قریں
مجھے نہ آے گا یقیں
نہیں نہیں ابھی نہیں
ابھی تو میں جوان ہوں
نہ غم کشود و بست کا
بلند کا نہ پست کا
نہ بعد کا نہ ہست کا
نہ وعدہ ء الست کا
امید اور یاس گم
حواس گم، قیاس گم
نظر سے آس پاس گم
ہمہ بجز گلاس گم
نہ مہ میں کچھ کمی رہے
قدح سے ہمدمی رہے
نشست یہ جمی رہے
یہی ہمہ ہمی رہے
وہ راگ چھیڑ مطربا!
طرب فزا، الم ربا
اثر صداے ساز کا
جگر میں آگ دے لگا
ہر ایک لب پہ ہو صدا
نہ ہاتھ روک ساقیا
پلاۓ جا، پلاۓ جا
ابھی تو میں جوان ہوں
حفیظ جالندھری💐
💙✌

View more

Next